آدھے سر کا درد۔ حکمت کی دنیا کا سب سے اچھا نسخہ۔

جیسے دفتر میں کسی کام کی ڈیڈلائن، کسی سے بحث، ٹریفک جام یہاں تک کہ اچھی چیزیں بھی آپ کے سر کو درد میں مبتلا کرسکتی ہیں۔مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ اکثر سر میں ہونے والا درد عارضی ہوتا ہے اور چند عام چیزوں سے بھی آپ سر میں ہونے والے اس درد سے نجات پاسکتے ہیں یا اس کی شدت کم کرسکتے ہیں؟ آدھے سر کے درد کے اکثر شکار رہنے والے افراد کو میگنیشم نامی منرل کو اپنی غذا کا حصہ بنانا چاہیے کیونکہ اس کی کمی ہی اکثر مائیگرین کا باعث بنتی ہے۔ میگنیشم کی بڑی مقدار کیلوں، چاکلیٹ، مچھلی اور سبزیوں میں موجود ہوتی ہے۔ ایک طبی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ روزانہ 400 ملی گرام وٹامن بی کا استعمال آدھے سر کے درد کی شکایت کو نمایاں حد تک کم کرتا ہے۔اچھی بات یہ ہے کہ بادام، مچھلی، پنیر اور متعدد سبزیوں و پھلوں میں یہ وٹامن موجود ہوتا ہے۔ ادرک سردرد سے نجات کے لیے ایک بہترین چیز ہے جو سر میں جانے والی خون کی شریانوں کی سوجن کو کم کرکے سردرد سے نجات دیتی ہے۔ ادرک کے تین ٹکڑوں کو دو کپ پانی میں ڈال کر آدھے گھنٹے تک ڈھک کر رکھیں اور پھر اسے چائے کی شکل میں تیار کرکے استعمال کرلیں۔ ایک امریکی تحقیق کے مطابق کافی میں موجود جز کیفین خون کی شریانوں کی سوجن کو کم کرتا ہے جس سے سردرد کی شدت میں بھی کمی آتی ہے۔اس تحقیق کے دوران رضاکاروں کے دو گروپ میں تقسیم کیا گیا اور ایک گروپ کو کیفین جبکہ دوسرے کو سردرد کی گولی دی گئی۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ کیفین سے ان کے سر کا درد مکمل طور پر ختم ہوگیا۔ اپنی درمیانی انگلی سے آنکھوں کے درمیان یا پیشانی کے آغاز کی جگہ کو مساج کریں۔اپنی انگلی کو گھڑی کی سوئیوں کی طرح دو سے تین منٹ تک گھمائیں اس سے آپ کو شدید سردرد سے نجات مل سکے گی۔ زیریں جسم میں گردش کرتا خون سر میں خون کی شریانوں پر سے دباﺅ کم کرتا ہے اور سب سے نچلا حصہ تو ظاہر ہے پاﺅں ہی ہوگا۔ سردرد کی شدت میں کمی لانے کے لیے اپنے پیروں کو مسٹرڈ پاﺅڈر ملے نیم گرم پانی سے بھرے کسی چھوٹے ٹب میں ڈبو دیں۔ ایسا آدھے گھنٹے تک کریں پھر پیروں کو باہر نکال کر کپڑے سے خشک کرلیں۔ ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ آدھے سر کے درد کے شکار افراد اگر ادویات کے استعمال کے ساتھ اگر یوگا کو عادت بنالیں تو انہیں جلد ریلیف ملتا ہے، اس تحقیق میں بتایا گیا کہ کسی بھی قسم کی ورزش فائدہ مند ہے مگر یوگا سردرد کے لیے زیادہ موثر جسمانی سرگرمی ہے جس سے مائیگرین کی شکایت کا خطرہ کم ہوتا ہے۔ جسم میں پانی کی کمی سردرد کو بدترین بنادیتی ہے، تو پانی پینا بھی سردرد کی شدت کم کرسکتا ہے۔ ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ جو لوگ اکثر سردرد کا شکار رہتے ہیں، اگر وہ دن بھر میں ڈیڑھ لیٹر زیادہ پانی پینا شروع کردیں تو انہیں شدید سردرد کا کم سامنا ہوتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.