کیا آپ جانتے ہیں ؟ بیماریاں کیوں لگتی ہیں

ایک اہم نقطہ کی طر ف لے کر جارہے ہیں

بہت سے لوگ بہت زیادہ کھانا کھاتے ہیں ۔ ضرورت سے زیادہ طبیعت اور مزاج میں اس سے کہیں زیاد ہ بڑھ کر ۔ آپ کو بتاتے ہیں کہ زیادہ کھانےکے نقصانات کیا ہے ؟آج بہت ہی پیارا موضوع ہے ۔ بہت پسندیدہ موضوع ہے۔ جس کودیکھے جس بچے کو دیکھے یا جس کو دیکھو تو وہ کہتا ہےکھاؤ تو جیوگا کھاؤ تو بچوگا۔ کھاؤ گا تو چلو گا۔ کھاؤ تو یہ کروں گا۔ جو لوگ کھانے کے لیے جیتے ہیں تو وہ لوگ جلدی مرجاتے ہیں ۔ جلدی بیمار ہوجاتے ہیں۔ جبکہ کھانا ہی کھانا ہے۔ اور ان کی پرسنیلٹی اور ان کی شخصیت ویران ہوجاتی ہے وہ جلدی بوڑھے ہوجاتےہیں۔ اسی طرح جو بچے ٹی ایج خصوصی طور پر بہت کھاتے ہیں۔ وہ جلدی بڑے ہوتے ہیں۔ جلدی داڑھی مونچھ آجاتی ہے۔ جلدی قد نکالتے ہیں اور ایک دم جو ہے ٹیڑھے ہوجاتےہیں۔ ان کی ریڑھ کی ہڈی ٹیڑھی ہوجاتی ہے ان کا ایک دم ہارمون سسٹم خراب ہوجاتاہے جو کہ ان کو اس وقت کھانا چاہیے تھا۔ اس سے انہوں نے بہت وافر مقدار میں اپنے ہارمون سسٹم کو چلا لیا۔ جس سے ان کے جسموں کا جونظام ہے وہ تباہ ہوگیا ہے وہ موٹے ہوگئے ہیں۔وہ لمبے ہوگئے ہیں ۔ ان کو عینک جلدی لگ گئی۔ ان کے بال سفید ہوگئے ۔ غرض ان سے چلا بھی نہیں جارہا۔ بجائے بڑوں کی خدمت کرنے کے اپنی خدمت کررہے ہوتے ہیں۔ بجائے صحتمند ہونے کے بیماریو ں کی طرف چلے جاتے ہیں ۔ اور بجائے کمانے وہ سارے پیسے ڈاکٹروں کو د ینے شروع ہوگئے۔ اور کھانا جو ہے اتنا کھانا شروع ہوگئےکھاؤ گا تو جیو گا۔تو وہ لفظ وہ ہمارے پاس آج ہے۔ اور جب آپ زیادہ کھائیں گے ۔ اور اس کو ہضم نہیں کریں گے ۔ تو آپ بیماریوں کی طرف سب سےپہلے جائیں گے قبض کی طرف۔ موٹاپے کی طرف، خشکی کیطرف، تیل کےجمنے کی طرف، دل کی بیماریو ں کی طرف، بلڈ پریشر کی طرف، شوگر کی طرف، یعنی کہ غرض ایک آپ میٹھا زیادہ کھالیتے ہیں۔ تو آپ کو شوگر ہوجائےگی۔ اسی طرح گرم چیزیں زیادہ کھالیتےہیں تو بلڈ پریشر ہوجائے گا۔ اگر آپ سپائسی چیزیں کھالیتے ہیں۔ جوانی میں آپ کاہارمون سسٹم تباہ ہوجاتا ہے جو لڑکیاں یا لڑکے ان کی داڑھی مونچھیں آجاتی ہیں ۔ جس سے مسائل قابو میں نہیں رہتے ۔ اسی طرح وہ لوگ جو زیادہ کھاتے ہیں نہ وہ دوڑ سکتے ہیں نہ چل سکتے ہیں۔ نہ بات کرسکتے ہیں۔ کیونکہ ان کا منشور یہ ہے کہ کھاؤ گا تو یہ ہوگا۔ اس لیے ان کاجسم کسی بھی جگہ خصوصی طور پر جو لوگ زیادہ کھاتے ہیں وہ غنودگی میں رہتے ہیں۔وہ انزائٹی میں رہتے ہیں۔ میں نے کچھ کھایا نہیں میرا دل گھبرا رہا ہے۔ میں نے کچھ کھایا ہی نہیں مجھے پیٹ میں درد ہورہا ہے ۔ میں نے کچھ کھایا ہی نہیں مجھے نیند نہیں آرہی۔ میں نے کچھ کھایا نہیں مجھ سے چلا نہیں جارہا ۔ یہ لفظ جو ہے کہ کھانا ہم نے اتنا کھانا ہے کہ کھانے کو ہم جسم کےاندر اٹھا کر چل سکیں۔ ناکہ اتنا کھالیں کہ کھانا ہمیں اٹھا کر اوپر لے جائے ۔زندگی کا عمل ہے کہ پہلے ایک چیز کھاؤ پہلے اس کو پچھاؤ۔ پھر دوسری چیز کھاؤ گے تو آپ کو طاقت ملے گی۔ لیکن اگر آپ نے زیاد ہ کھالیا اور سو گئے ۔ اور کھاتے ہی جارہے ہیں تو اس سے آپ کی صحت بھی خراب ہوجائے گی۔آپ کی شخصیت بھی ضائع ہوجائے گی۔ آپ کا وقت بھی ضائع ہوجائے گا۔ آپ کا پیسہ بھی ضائع ہوجائے گا۔ جس کا آپ کو کوئی فائدہ نہیں ہے۔ اور آپ کی زندگی کا کوئی منشو رنہیں ہے۔ اس لیے آپ کھانا سیکھ لیں گے تو آپ زندگی میں آجائیں گے خوشحالی میں آجائیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.