اللہ کے حکم سے پرانے سے پرانا معدے کا السر

معدے کی بہت ساری بیماریوں کے پیدا ہونے کی وجہ ایچ۔پائیلوری یعنی ہیلیکو بیکٹر بیکٹیریا ہے

یہ بیکٹیریا معدے میں ان ہیلتھی ڈائیٹ، ان ہائی جینک فوڈ، جنک فوڈز، با ہر کے کھانےاور فیکٹریوں سے فضلے سے کاشت سبزیو ں کے ذریعے جسم میں پہنچتا ہے یہ بیکٹیریا معدے کے السر کا باعث ہے۔ اور ڈبلیو ۔ ایچ ۔ او کے سٹیٹسٹکس کےمطابق پاکستا ن میں ساٹھ فیصد لوگ اس مرض کا شکار ہیں۔ پہلے پہل اس کی وجہ سے موشن لگے رہتے ہیں۔ یا کھانا کھاتے فوراً ہی موشن آجاتا ہے۔ اور پھر جب یہ مرض پرانا ہوتا جاتا ہے۔ تو قبض کی صورت اختیار کرلیتا ہے۔اور قبض کی صورت میں یہ آنتوں میں ورم اور سوزش پیدا کرنے کا باعث بنتا ہے یعنی ایک بیکٹیریا کی وجہ سے معدے کے السر کے ساتھ ساتھ ایری ٹیبل باؤل سینڈروم یعنی آئی ۔ بی ۔ایس کا بھی مسئلہ پید اہوجاتا ہے۔ آئی ۔ بی ۔ایس سے مراد آنتوں کی سوزش ہے ۔ یہ مرض مریض کو انتہائی زیادہ پریشانی کا شکار کرتا ہے۔اس مرض کے اندر نیند کی کمی ، سینے میں جلن، گیس ، تیزابیت یا ہاتھوں پاؤں کا جلنا، جسم میں درد، خاص کر رانوں اور پنڈ لیوں مین درد رہتا ہے۔ مختلف وٹامنز کی جسم کے اندر کمی ہوجاتی ہے۔ خاص کر وٹامن ڈی کی بہت زیادہ جسم کے اندر کمی واقع ہوجاتی ہے۔ اور وٹامن ڈی کی کمی جسم کے اندر کیلشیم کا میٹا بولزم تباہ کردیتی ہے۔ غرض ایک یہ مرض جسم میں بہت زیادہ تکلیف دہ امراض کو پیدا کرتا ہے۔ہارمونز کا نظام خراب ہوجاتا ہے۔ خواتین میں پیریڈز کے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ اور مردوں میں جنسی امراض کو بہت تیزی سے پیدا کرتا ہے ۔مردانہ بانجھ کی ایک بڑی وجہ معدے کا السر بھی بنتا ہے۔ اعصابی نظام یعنی پٹھوں کی کمزوری پیدا کرتا ہے ۔ اینزائٹی ، ڈپریشن کو پیدا کرتا ہے ۔ یاداشت کو کمزورکرتا ہے جب سوئے اٹھیں تو منہ میں بہت زیادہ بدبو ہوتی ہے۔ کھٹے ڈکار، جلن ، زیادہ میٹھا یا زیادہ کھٹا کھانے سے منہ میں بہت زیادہ تھو ک آتا ہے۔ دل گھبراتا ہے۔ بھو ک کم ہوجاتی ہے۔ ان ڈائجسٹڈ فوڈز یعنی پاخانے کے ذریعے جسم سے نکل جاتی ہیں۔ یہ ساری علامات بعض اوقات ایک مریض میں پائی جاتی ہیں۔ بعض اوقات ان میں سے کچھ علامات مریض کے اندر پائی جاسکتی ہیں۔ اس مرض سے نجات حاصل کرنے کےلیے آپکو اپنے لائف اسٹائل کو نوے ڈگری کے زاویے سے تبدیل کرنا ہوگا۔ سب سےپہلے آپ کو پر وبائیوٹک لینے چاہیں۔ یعنی وہ انسان دوست جراثیم جو معدے کے اندر آپ کو مختلف بیماریوں سے بچاتے ہیں۔ اور آپ کی مدد کرتے ہیں۔ پر وبائیوٹک دہی کے ذریعے سے حاصل کرسکتے ہیں۔ یہ انسان دوست جراثیم آپ کو معدے کے السر نہ صرف بچائیں گے ۔ بلکہ آپ کو معدے کے اندر پیدا ہونےوالے امراض سے بھی محفوظ رکھیں گے۔ صبح ناشتے کے اندر آپ دہی کے ایک باؤل کے اندر دوچٹکی زیرہ ، اجوائن ہاتھ سے مسل کرڈالیں۔ا ور دہی میں مکس کرکے آپ ناشتے کے ساتھ اس دہی کو کھاجائیں ۔ دوپہر کھانے کے اندر پودینہ ، دھنیا،انار دانہ ، سبز مرچ، ادرک ، لہسن پر مشتمل چٹنی بنائیں ۔ اور اس چٹنی کے ساتھ بند گوبھی، کھیرا، پیاز اور آڑو اس کی سلاد کاٹ لیں۔ اور اس سلا د کو دوپہر کے کھانے کے اند رکھائیں۔ جدیدریسر چ کےمطابق اور کچھ امریکن ڈاکٹرز بھی معدے کے السر کا علاج بند گوبھی کے ذریعے بھی کررہے ہیں۔ آپ بند گوبھی کا استعمال معمول کے اندر لائیں ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.