آنکھوں کی الرجی کا مکمل خاتمہ

ایک سوال ہے آنکھوں کی الرجی کا علاج بتا دیں؟

اس کا جواب کچھ یوں ہے ۔ آج کل گرمیوں میں آنکھوں کی الرجی ہے۔ اس کا بہترین علاج ، پہلا تو وہی ہے۔ لمبا سجدہ کرو۔ کیلے کے ساتھ دانت صاف کرو۔ کئی ہزار لوگ اپنے زندگیاں بدل چکے ہیں۔ اور وہ کیلے کے پیسٹ کرکے بتاتے ہیں۔ جب سے ٹوتھ پیسٹ چھوڑا ہے۔ ہماری کئی بیماریاں ٹھیک ہوگئیں ہیں۔ کیلے کے ساتھ دانت صاف کرو۔ اور صبح اٹھ کر اپنا تھوک “بسم اللہ” پڑھ کر ” سورت الفاتحہ “پڑھ کر اپنی آنکھوں میں ڈال دو۔ اور اس نیت سے ڈالو کہ جب حضرت علی رضی اللہ عنہ کی آنکھیں جب خراب ہوئی تھیں ۔ تو پیارے پیغمبر حضرت محمد ﷺ نے ان کی آنکھوں میں کیا ڈالا تھا؟ انہوں نےاپنا لعا ب دہن ڈالا تھا۔ اور اس کے ساتھ ٹھنڈے پانی کے چھینٹیں مارو۔ اور آنکھو ں سے بچنےکے لیے آنکھوں کی الرجی سے بچنے کےلیے جو نبی پاک ﷺ نے اثمد سرمہ استعمال کیا کرتےتھے۔ یہ سنت ہے۔ اور یہ بہترین علاج ہے۔ اثمدسرمہ استعمال کرو۔ اپنی آنکھوں میں شہد لگاؤ۔ یہ بہترین علاج ہے۔ آنکھیں خراب ہوتی ہیں۔ جب ہم آنکھوں کو غلط استعمال کرتے ہیں۔ جب ہم ان سے بدنگاہی کرتے ہیں۔ جب ہم ان سے وہ چیزیں دیکھتے ہیں۔ جس کا دیکھنا اللہ نے اجاز ت نہیں دی۔ وہ ح رام ہیں۔ جب ہم ح رام چیز دیکھتے ہیں۔ تو اس کا امیج ہمارے ذہن میں آتا ہے۔ جب ا س کا امیج ہمارے دماغ میں آتا ہے دماغ اس کے بارے میں پلاننگ کرتا ہے دل اس کو چاہنا شروع کردیتا ہے۔ اللہ تعالیٰ ایسے امیجیز کو آپ کے ذہن میں جانے بھی نہیں دیتے ۔ اللہ چاہتے ہیں ایمان والو ! اپنی نظروں کو جھکا لو۔ آنکھیں خراب ہیں ۔ توآنکھوں کو جھکا کر دیکھو۔ ایک مرتبہ صرف دو ، چار، پانچ اور سات دن کرکے دیکھو۔ اپنی آنکھو ں کو جتنا جھکاؤ گے ۔ جب آپ کی آنکھوں میں کوئی بھی امیج نہیں جائے گا۔ اس کی رینٹینا میں کوئی امیج آئے گا۔ کوئی امیج نہیں آئے گا۔ یقین مانو !آپ ایک مرتبہ اپنی آنکھوں کو جھکا کر دیکھو۔ اپنی آنکھوں کو شرم کی وجہ سے جھکا کر دیکھو۔ اور اپنی آنکھوں میں جو پانچ بار وضو کرے گا۔ جو چھینٹیں مارے گا کیا اس کی آنکھیں خراب ہوسکتی ہیں؟ دھندلہ پن ہوسکتا ہے؟ یہ ڈبل ویژن ہوسکتا ہے؟ آنکھوں سے پانی آسکتا ہے ؟ نبی پاک ﷺ نے جوطریقے بتائے ہیں۔ اس میں شفاء ہیں۔ جب حضرت علی رضی اللہ عنہ کی آنکھیں جب جنگ خیبر میں آپ کی آنکھیں خرا ب ہوئیں۔ تو آپ ﷺنے ان کی آنکھو ں میں کیا ڈالا تھا؟ لعاب دہن ڈالا تھا۔ اپنا سلائیوا یہ سنت ہے۔ صبح اٹھو تو اس وقت اپنی آنکھوں میں ڈالو۔ اور جب آپ کو بہت بھوک لگے اس وقت ” بسم اللہ ” پڑھ کر ” سور ت الفا تحہ ” پڑھ کر اپنا سلائیوا لو اور اپنی آنکھوں میں ڈال کرمل لو۔ اور ٹھنڈ ے پانی کے چھینٹیں مارو۔ گرمیوں میں یہ جو تیز دھوپ ہے ۔ اس سے اپنے آپ کو بچاؤ۔ خا ص طور پر یہ جو موبائل ہیں۔ اس کے اندر سے جو ریڈ ایشن نکلتی ہیں ۔ یہ آپ کی آنکھوں کو خراب کرتی ہیں۔ یہ جو مصنوعی لائیٹس ہیں۔ یہ آپ کی آنکھوں کوخراب کرتی ہیں۔ رات جب ہوجائے تو پھر لائیٹ کا استعمال نہ کرو۔ عشاءکی نماز پڑھ کر یہ لائیٹ نہ جانے دو۔ آج آنکھو ں کےخراب ہونے کا بہت بڑا سبب یہ مصنوعی لائیٹس ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.