کمزوردماغ والو کا بہترین علاج

ایک سوال ہے کہ ہمارے ہاں جب دعوت ہوتی ہے تو کچھ لوگ اکٹھے ہوکر گانا چلاتے ہیں۔

تو کیا اسی وقت روکا جائے یا موقع دیکھ کر؟ اس کا جواب کچھ یوں ہے کہ وہاں سے اٹھنا واجب ہے۔ معلوم یہ کرنا تھا کہ قرآن کی روشنی میں اللہ تعالیٰ انسانوں سے مذکر ومونث کے علاوہ بھی کوئی جنس پیدا کی ہے جیسا کہ ہیجڑہ ، کھسرا وغیرہ ؟اس کاجواب کچھ یوں ہے ۔ پیدا کیے ہیں۔ نظر آتے ہیں۔ تھوڑے تھوڑے ہیں۔ زیادہ نہیں ہیں۔ لو گ کہتے ہیں جب داڑھی فرض نہیں تو اس پر مولوی اتنا زور کیوں لگاتا ہے۔ کیا بغیر داڑھی مسلمان میں جنت میں نہیں جائےگا ؟ اس کاجواب کچھ یوں ہے۔ داڑھی فرض ہے۔ نبی پاک ﷺ کا حکم ہے۔ باقی جنت میں نہیں جائے گا۔ یہ فتویٰ نہیں لگا سکتے۔ باقی یہ ہے کہ براعمل ہے۔ باقی اللہ کسی کوبخش دے ۔ لیکن ہے جہنم میں لے جانے والا عمل ۔ ایسا ہی ہے جیسا آپ ریڈ سنگلنلزتوڑ دیں۔ تو چالان کٹے گا۔ لیکن قانون تو یہ ہے کہ کٹے گا۔ لیکن اگر وزیراعظم آپ کو چھوڑ دے ۔ تو کیا خیال ہے؟ تواللہ اگر چھوڑ دے تو اچھی بات ہے ۔ لیکن بڑا گن اہ ہے۔ ایک خاتون کا سوال ہے کہ میرے گھر والے مجھے بے پردہ محفل میں لے جاتے ہیں۔ تاکہ رشتے آئے؟ اس کا جواب کچھ یوں ہے۔ غلط بات ہے یہ آج کل خواتین ایسا کرتی ہیں۔ اپنی بچیوں کو بے پردہ محفلوں میں لے کر جاتی ہیں ۔تاکہ لوگ ان کو دیکھیں پھر رشتے بھیجیں۔ یہ طریقہ غلط ہے۔ رشتے منگوانے کا یہ طریقہ غلط ہے۔ ذہن کمزور ہے کوئی وظیفہ بتادیں ؟اس کو جواب کچھ یوں ہے۔ بادام کھایا کریں۔ بادا م جو ہیں۔ وہ رات کو پانی میں بھگو کررکھ دیں۔ اور صبح خوب اچھی طرح چبا کرکھائیں۔ بادام کم چبا کر کھاؤ گے ۔ تو فائدہ نہیں ہے۔ بہت زیادہ چبانا پڑتا ہے۔اس کاتیل نکال دو۔ پھر بادام کا فائدہ ہے۔ او ر بادام سے بہتر کوئی خشک میوہ ہے نہیں۔ دماغ کےلیے اخروٹ کھائیں۔ اخروٹ دماغ کےلیے سب سے بہتر میوہ ہے ۔ اللہ نے اس کی شکل بھی دماغ جیسی بنائی ہے۔ ویسے آج کل جو دماغ کمزور ہیں۔اس کی وجہ اخروٹ کی وجہ نہیں ہے۔ بلکہ دماغ استعمال نہیں کرتے ۔جو چیز انسان کی استعمال نہیں ہوتی ۔ وہ کمزور ہوجاتی ہے۔ آپ چلنا چھوڑ دیں گے ۔ تو ٹانگیں کیا ہوجائیں گی؟کمزور ۔ چاہیں روزانہ دودھ پئیں۔ دہی کھائیں ۔ چربی بھی کھائیں تب بھی فائدہ نہیں ہوگا۔ چلنا پڑے گا۔ ہاتھوں سے وزن اٹھانا چھوڑ دیں تو ہاتھ کمزور ہوجائیں گے۔ چاہے کچھ بھی کھالیں۔ اس لیے دماغ سے سوچیں گے نہیں ۔ مشکل مشکل چیزیں حل نہیں کریں گے۔ تو دماغ انسان کا سونے لگتا ہے۔وہ کام کرنا چھوڑ دیتا ہے۔ تو دماغ کو بھی کچھ مفید کاموں میں کھپائیں۔ سوچیں۔ کوئی نئی زبان سیکھنے سے دماغ یعنی اس کی ورز ش ہوتی ہے۔ قرآن حفظ کرنے سے دماغ کی ورزش ہوتی ہے۔ تو ایسے مفید کاموں میں دماغ کو لگائیں گے۔ تو دماغ جاگتا رہے گا۔ جو نفیساتی ڈاکٹر ہیں۔ وہ ایک دماغ کی ورزش بتاتے ہیں کہ گھڑی کو الٹا رکھ کر دیکھیں ٹائم کیا ہورہا ہے؟ تو دماغ لگتا ہے۔ اس سے دماغ کی ورز ش ہوتی ہے۔ کچھ لوگوں کو اس لیے نہیں بتاتا۔ اس سے دماغ کی ورزش ہوگی ۔ مگر حاصل کچھ نہیں ہوگا۔ سوائے ورزش کے۔ لہٰذا ایسا کام کرلیں جس سے ایکسرسائز بھی ہوجائے اور کچھ نئی زبان سیکھ لیں ۔انگلش زبان سیکھ لیں۔ یا قرآن حفظ کرلیں۔ تو اس میں دماغ لگے گا۔ تو ایکسرسائز بھی ہوگی ۔اوردماغ بھی کھلے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.