خون کی کمی دور کرنے کا سب سے آسان نسخہ ۔ تھوڑی سی کشمش لیں اور ہمارے بتائے طریقے سے استعمال کرلیں اور پھر گالوں کی لالی چیک کریں

کشمش کو تو آپ سب نے دیکھا ہی ہوگا. جو کہ انگور کو خشک کرکے بنائی جاتی ہے اور اس کی مختلف طرح کی رنگت ہوتی ہے جیسے گولڈن ، سبزیا سیاہ وغیرہ ۔ یہ مزیدار اور لذیز میوہ عام استعمال کیا جاتا ہے مگر کیا آپ جانتے ہیں کہ اگر اس کا روزانہ استعمال کیا جائے تو اس سے آپ کیا فائدہ حاصل کرسکتے ہیں ؟ اگر نہیں تو ضرور جان لیں۔

فائبر سے بھرپور یہ میوہ یعنی کشمش میں ٹاٹرک ایسڈ بھی کافی موجود ہوتا ہے جو ہلکے جلاب جیسا اثر دکھاتا ہے ۔ ایک عالمی تحقیق کے مطابق آدھا اونس کشمش کا روزانہ استعمال کرنے والے افراد کا نظام ہاضمہ دوگنا تیزی سے کام کرتا ہے ۔

کشمش آئرن سے بھرپور میوہ ہے ، جو جسم میں خون کی کمی دور کرنے کے لیے ایک اہم ترین جزو ہے ، اس میوہ یعنی کشمش کو آسانی سے دلیہ ، دہی یا کسی بھی میٹھی چیز میں شامل کرکے کھایا جاسکتا ہے بلکہ ویسے کھانا بھی منہ کا ذائقہ ہی بہتر کرتا ہے ۔لیکن ذیابیطس کے شکار افراد کویہ میوہ بہت زیادہ کھانے سے کافی حد تک گریز کرنا چاہئے یا پھر ڈاکٹر کے مشورے سے ہی استعمال کریں ۔

کشمش میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس وائرل بیکٹیریا سے ہونے والے انفیکشن کے نتیجے میں بخارکے عارضے کا علاج بھی فراہم کرتے ہیں ۔کشمش میں پوٹاشیم اور میگنیشیم بھی موجود ہوتے ہیں جو کہ معدے کی تیزابیت میں بہت زیادہ کمی لاتے ہیں . معدے میں تیزابیت بڑھنے سے جلدی امراض یعنی جوڑوں کے امراض ، بالوں کے گرنا، امراض قلب اور کینسر تک کا خطرہ بڑھ جاتا ہے ۔

کشمش میں موجود اجزاء آنکھوں کو مضر ریڈیکلز سے ہونے والے نقصان سے تحفظ دیتے ہیں اس کے ساتھ ساتھ عمر بڑھنے کے ساتھ پٹھوں کی کمزوری ، موتیا اور بینائی کی کمزوری سے بھی تحفظ ملتا ہے ۔ اس میوے میں موجود بیٹاکیروٹین ، وٹامن اے اور کیروٹین بھی بینائی کو بہتر بنانے میں مدددیتے ہیں ۔کاربوہائیڈریٹس اور قدرتی چینی کی بدولت یہ میوہ جسمانی توانائی کے لیے بھی اچھا ذریعہ ہے ، کشمش کا استعمال وٹامنز ، پروٹین اور دیگر غذائی اجزاء کو جسم میں موثر طریقیسے جذب ہونے میں بھی مدددیتا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ باڈی بلڈرز اور ایتھلیٹس کشمش کا استعمال عام کرتے ہیں ۔

بے خوابی سے نجات کے لیے : اس میوے میں موجود آئرن بے خوابی یا نیند نہ آنے کی بیماری سے نجات دلانے میں مدددیتا ہے جبکہ نیند کا معیار بھی کافی حد تک بہتر ہوتا ہے۔آئرن، پوٹاشیم ، بی وٹامنز اور اینٹی آکسیڈنٹس بلڈ پریشر کو معمول پر رکھنے میں مدددیتے ہیں ، خاص طور پر پوٹاشیم خون کی شریانوں کے تناؤ کو کم کرتا ہے اور بلڈپریشر کو قدرتی طور پر کم کرتا ہے ۔ اسی طرح قدرتی فائبر شریانوں کی اکڑن کو کم کرتا ہے جس سے بھی بلڈپریشر کی سطح میں کمی آتی ہے ۔

میوے میں موجود کیلشیم ہڈیوں کی صحت کے لیے فائد ہ مند ہے جو ہڈیوں کی مضبوطی برقرار رکھنے میں مدددیتا ہے ۔پوٹاشیم سے بھرپور ہونے کی وجہ سے ان کا استعمال معمول بنانا گردوں میں پتھری کا خطرہ کم کرتا ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published.